Home Nutrition & Diet سرد موسم میں اخروٹ کا استعمال کیوں ضروری ہے؟ اس کے 5 فوائد جانیے

سرد موسم میں اخروٹ کا استعمال کیوں ضروری ہے؟ اس کے 5 فوائد جانیے

Published: Last Updated on
sardi-main-akhrot-khane-ke-fayde
Spread the love

سرد موسم میں خشک میوہ جات کے استعمال کی بات ہو اور اخروٹ کا ذکر نہ آئے، ایسا ممکن نہیں ہے۔ اخروٹ ایک ایسا خشک میوہ ہے جس کا ذائقہ نہ صرف خوش گوار ہوتا ہے بلکہ اس سے حاصل ہونے والے طبی فوائد بھی بہت زیادہ ہیں۔ اس کے علاوہ اخروٹ کو روایتی طور پر جنسی زندگی کو بہتر بنانے کے ذریعہ سمجھا جاتا ہے، جب کہ کچھ علاقوں میں اخروٹ مردانہ طاقت بڑھانے کے لیے استعمال ہوتا ہے۔

اخروٹ کس حد تک مردانہ طاقت بڑھاتا ہے، اس حوالے سے مزید طبی تحقیقات کی ضرورت ہے۔ تاہم طبی تحقیقات سے یہ بات ثابت ہو رہی ہے کہ اخروٹ کے استعمال سے صحت پر بہت سے مثبت اثرات ظاہر ہوتے ہیں، کیوں کہ اس میں کافی مقدار میں منرلز، وٹامنز، اور نیوٹرنٹس پائے جاتے ہیں۔

ایک عام اندازے کے مطابق تیس گرام اخروٹ میں ایک سو پچاسی کیلوریز، چار فیصد پانی، تقریباً ساڑھے چار گرام پروٹین، چار گرام کاربز، آدھا گرام شوگر، دو گرا، فائبر، اور ساڑھے اٹھارہ گرام فیٹ پایا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ اخروٹ میں پائے جانے والے غذائی اجزاء میں کاپر، فولک ایسڈ، فاسفورس، وٹامن بی6، میگنیز، اور وٹامن ای شامل ہیں۔

اخروٹ کو استعمال کرنے کے طریقے کے متعلق لوگ پریشانی کا سامنا کرتے ہیں۔ اکثر انہیں یہ سوال درپیش ہوتا ہے کہ اخروٹ کو کیسے استعمال کیا جائے؟

اخروٹ کھانے کا طریقہ

ہر فرد اخروٹ کھانے کے مختلف طریقے اپناتا ہے۔ اخروٹ کو دودھ کے ساتھ استعمال کیا جا سکتا ہے۔ ایک گلاس گرم دودھ کے ساتھ اخروٹ کو چبا کر کھایا جا سکتا ہے۔ اس کے علاوہ کچھ لوگ اخروٹ کو دودھ میں ابال کر استعمال کرنا بھی پسند کرتے ہیں۔ اگر اخروٹ کو دودھ میں ابالا جائے تو دودھ کا ذائقہ نہایت لذیذ ہو جاتا ہے۔

اس کے علاوہ مردانہ طاقت کے لیے اخروٹ اور شہد کو ملا کر استعمال کیا جاتا ہے۔ اخروٹ کو اگر شہد کے ساتھ ملا کر استعمال کیا جائے تو کافی طبی فوائد حاصل ہوتے ہیں۔ اخروٹ اور شہد کے طبی فوائد کافی زیادہ ہیں، تاہم اگر آپ ذیابیطس کے مریض ہیں تو اخروٹ کا شہد کے ساتھ ملا کر استعمال کرنے سے گریز کریں، کیوں کہ ان کے استعمال سے آپ کے شوگر لیول میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

اخروٹ کے نقصانات

اخروٹ کے فوائد پر بات کرنے سے پہلے یہ جاننا ضروری ہے کہ کیا اخروٹ کے استعمال سے طبی نقصانات کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے؟ اس سوال کا جواب دیتے ہوئے ڈاکٹر ثناء اقبال کا کہنا ہے کہ اخروٹ کو اگر متوازن مقدار میں استعمال کیا جائے تو اس بات کے امکانات نہایت کم ہوتے ہیں کہ ان کی وجہ سے مضرِ صحت اثرات کا سامنا کرنا پڑے۔ تاہم بعض اوقات اخروٹ کے استعمال سے پیٹ کے اپھار کا سامنا کرنا پڑتا ہے، جب کہ اگر ان کو باقاعدگی کے ساتھ استعمال کیا جائے تو وزن میں بھی اضافہ ہو سکتا ہے۔

اخروٹ کے فوائد

اخروٹ کے استعمال سے مندرجہ ذیل فوائد حاصل کیے جا سکتے ہیں۔

ہاضمہ کے نظام کے لیے بہترین

اخروٹ کو فائبر حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ سمجھا جاتا ہے۔ ان سے حاصل ہونے والے فائبر کی وجہ سے جسم ڈی ٹاکسیفائی ہوتا ہے اور بڑی آنت بھی صاف ہوتی ہے۔ اس کے علاوہ اخروٹ کے استعمال سے قبض جیسی طبی علامات کی شدت میں بھی کمی آتی ہے۔

اس خشک میوے کے استعمال سے آنتوں کی صحت میں بہتری ہے اور ان میں ایسے بیکٹیریا کی افزائش ہوتی ہے جو صحت مند تصور کیے جاتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ بڑی آنت میں موجود نقصان دہ جراثیموں کا بھی خاتمہ ہوتا ہے جس سے آنتوں کی سوزش جیسے امراض کے خظرات میں کمی آتی ہے۔

اگر آنت میں ان جراثیموں کی تعداد میں کمی نہ آئے تو موٹاپے اور کینسر جیسی جان لیوا بیماریاں لاحق ہو سکتی ہیں۔ اخروٹ کے استعمال کو یقینی بنا کر ان تمام مسائل سے بچا جا سکتا ہے اور صحت مند زندگی گزاری جا سکتی ہے۔

دماغی صحت میں بہتری

جیسا کہ آپ جانتے ہیں عمر میں اضافے کی وجہ سے دماغ کی صحت بھی خراب ہوتی ہے۔ لیکن کچھ اقدامات کی مدد سے دماغ کی صحت میں تنزلی کی عمل کو سست کیا جا سکتا ہے، بلکہ اسے روکا بھی جا سکتا ہے۔

اگر اخروٹ جیسی غذاؤں کو استعمال یقینی بنایا جائے تو دماغ کی صحت کی خرابی کے عمل کو روکا جا سکتا ہے۔ طبی تحقیقات بھی اس بات کی تصدیق کر رہی ہیں کہ اخروٹ کے استعمال سے دماغ کی صحت کو فائدہ پہنچتا ہے۔ اخروٹ کو وٹامن بی6 کے ساتھ ملا کر بھی استعمال کیا جا سکتا ہے کیوں کہ وٹامن بی6 بھی دماغ کے لیے نہایت مفید ہوتا ہے۔

اس کے علاوہ اخروٹ میں پولی فینولک کمپاؤنڈز بھی پائے جاتے ہیں جو کہ جسم میں بطور اینٹی آکسیڈنٹس کام کرتے ہیں۔ ان کمپاؤنڈز کی وجہ سے دماغ کے سیلز میں سوزش واقع نہیں ہوتی، اور اگر پہلے سے سوزش واقع ہو چکی ہو تو اس میں کمی آنا شروع ہو جاتی ہے۔

اخروٹ کے استعمال سے دماغ میں نئے سیلز بھی بننا شروع ہو جاتے ہیں جو کہ اس کی صحت کے لیے مفید سمجھے جاتے ہیں۔

نیند میں بہتری

بہت سے لوگ نیند کے مسائل کا شکار ہوتے ہیں۔ جب جسم میں میلاٹونن کی پیداوار اور افزائش کم ہو جائے تو عمومی طور پر نیند کے مسائل لاحق ہو جاتے ہیں۔ 

اخروٹ کو باقاعدگی کے ساتھ استعمال کرنے جسم میں میلاٹونن کی پیداوار بہتر ہوتی ہے جس سے رات کو اچھی نیند آتی ہے اور اس میں خلل واقع نہیں ہوتا۔ اس کے علاوہ لوگ رات کو دودھ اور اخروٹ بھی استعمال کرتے ہیں تا کہ نیند میں بہتری آئے۔

بالوں اور جِلد کے لیے مفید

جسم میں اگر فری ریڈیکلز کی مقدار زیادہ ہو جائے تو بالوں اور جِلد کی صحت کو نقصان پہنچتا ہے۔ فری ریڈیکلز کی وجہ سے جِلد خشک ہو جاتی ہے اور اس پر دھبے بھی نمودار ہونا شروع ہو جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ فری ریڈیکلز کی وجہ سے بالوں کی صحت کو بھی نقصان پہنچتا ہے۔

اخروٹ کے استعمال سے فری ریڈیکلز کے اثرات کم ہونا شروع ہو جاتے ہیں جس سے بالوں اور جِلد کی صحت میں بہتری آنا شروع ہو جاتی ہے۔

ہڈیوں کی مضبوطی میں اضافہ

اخروٹ کے مزید طبی فوائد جاننے کے لیے سیفی ہسپتال سے تعلق رکھنے والے کسی بھی ماہر غذائیت سے رابطہ کیا جا سکتا ہے، آسانی کے ساتھ کسی بھی ماہرِ غذائیت سے رابطہ کرنے کے لیے ہیلتھ وائر کا پلیٹ فارم استعمال کیا جا سکتا ہے، کیوں کہ ہیلتھ وائر نے رابطوں کو بہت آسان بنا دیا ہے۔

Related Posts

Leave a Comment

Call for assistance
042 32500989